نظر ﮐﻮ ﺑﮩﺘﺮ ﮐﺮﻧﮯ ﮐﮯ لئے ﻋﯿﻨﮏ ﮐﮯ ﺳﺎﺗﮫ ﺳﺎﺗﮫ لینز ﮐﺎ ﺍﺳﺘﻌﻤﺎﻝ ﺑﮭﯽ عام ہے، ﮐﻨﭩﯿﮑﭧ ﻟﯿﻨﺰ ﮐﻤﺰﻭﺭ ﺑﯿﻨﺎﺋﯽ ﮐﻮ ﺑﮩﺘﺮ ﮐﺮﻧﮯ ﮐﺎ ﻧﻈﺮ ﻧﮧ ﺁﻧﮯ ﻭﺍﻻ ﺍﯾﮏ بہترین ﻃﺮﯾﻘﮧ ﮨﮯ، ﺍﮔﺮ ﺁﭖ ﻟﯿﻨﺰ ﺍﺳﺘﻌﻤﺎﻝ ﮐﺮتے ﮨﯿﮟ ﺗﻮ آپ کو ان کے بارے میں ضروری معلومات ہونی چاہیے کیونکہ ﺫﺭﺍ ﺳﯽ ﺑﮯ ﺍﺣﺘﯿﺎﻃﯽ ﺍﻭﺭ ﻻﭘﺮﻭﺍﺋﯽ ﮐﯽ ﻭﺟﮧ ﺳﮯ آنکھوں کے کئی سنگین ﻣﺴﺎﺋﻞ ﭘﯿﺪﺍ ﮨﻮ سکتے ﮨﯿﮟ

ﺩﻥ ﺑﮭﺮ ﺍﺳﺘﻌﻤﺎﻝ ﮐﮯ بعد رات کے وقت ﻟﯿﻨﺰ ﺧﺸﮏ ﮨﻮ ﺟﺎﺗﮯ ﮨﯿﮟ کیونکہ ﮐﻨﭩﯿﮑﭧ ﻟﯿﻨﺰ ﺩﻥ ﺑﮭﺮ ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﮐﮯ ﻗﺪﺭﺗﯽ ﻧﻤﮑﯿﻦ ﭘﺎﻧﯽ ﻣﯿﮟ ﺑﮭﯿﮕﮯ ﺭﮨﺘﮯ ﮨﯿﮟ، ﺭﻓﺘﮧ ﺭﻓﺘﮧ ﯾﮧ ﭘﺎﻧﯽ ﮨﻤﺎﺭی ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﺳﮯ ﺑﺨﺎﺭﺍﺕ ﮐﯽ ﺷﮑﻞ ﻣﯿﮟ ﺍﮌ ﺟﺎﺗﺎ ہے، ﺑﭻ ﺟﺎﻧﮯ ﻭﺍﻻ ﻧﻤﮏ ﮨﻤﺎﺭﮮ ﻟﯿﻨﺰ ﭘﺮ ﺭﮦ ﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ، ﯾﮧ ﻧﻤﮏ ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﮐﮯ لئے ﺗﻮ ﺍﭼﮭﺎ ﮨﻮﺗﺎ ﮨﮯ ﻣﮕﺮ ﺍﺱ ﻧﻤﮏ ﮐﯽ ﺯﯾﺎﺩﺗﯽ ﺳﮯ ﮨﻤﺎﺭﮮ ﻟﯿﻨﺰ ﻣﺘﺎﺛﺮ ﮨﻮﺗﮯ ﮨﯿﮟ، ﯾﮩﯽ ﻭﺟﮧ ﮨﮯ ﮐﮧ ﺭﺍﺕ ﮐﮯ ﻭﻗﺖ لینز ﺧﺸﮏ ﻣﺤﺴﻮﺱ ﮨﻮﻧﮯ ﻟﮕﺘﮯ ﮨﯿﮟ

ﺭﻭﻧﮯ کی وجہ ﺳﮯ ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﻧﻤﮏ ﮐﯽ ﺿﺮﻭﺭﯼ ﻣﻘﺪﺍﺭ ﮐﻢ ﮨﻮ ﺟﺎﺗﯽ ﮨﮯ، ﺟﺐ ﮨﻢ ﺭﻭﺗﮯ ﮨﯿﮟ تو ﻟﯿﻨﺰ ﭘﺮ ﺭﺍﺕ ﮐﮯ ﻭﻗﺖ ﻧﻤﮏ ﮐﯽ ﻣﻘﺪﺍﺭ ﺍﺗﻨﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﮨﻮﺗﯽ ﺟﺘﻨﯽ ﻋﺎﻡ ﺣﺎﻻﺕ ﻣﯿﮟ ﺑﺎﻗﯽ ﺭﮦ ﺟﺎﺗﯽ ﮨﮯ، آنکھوں میں نمک کی مقدار کا توازن بگڑنے سے ﺻﻮﺭﺕ ﺣﺎﻝ خراب ہونے لگتی ہے اور لینز شدید تکلیف کا باعث بن سکتے ہیں

ﻟﯿﻨﺰ ﮐﯽ ﺍﯾﮏ ﻧﺌﯽ ﻗﺴﻢ ﻣﺘﻌﺎﺭﻑ ﮐﺮﺍﺋﯽ گئی ہے، ﯾﮧ ﻟﯿﻨﺰ ﺻﺮﻑ ﺍﯾﮏ ﺗﮩﮧ ﮐﮯ ﺑﺠﺎﺋﮯ ﺗﯿﻦ ﺗﮩﻮﮞ ﭘﺮ ﻣﺸﺘﻤﻞ ہوتے ہیں، ﺍﻥ ﮐﯽ ﭘﮩﻠﯽ ﺩﻭ تہیں ﺗﻮ ﻋﺎﻡ ﻟﯿﻨﺰ ﮐﯽ ﻃﺮﺡ ﮨﻮﺗﯽ ﮨﮯ ﻣﮕﺮ ﺗﯿﺴﺮﯼ ﺍﻭﺭ ﺩﺭﻣﯿﺎﻧﯽ ﺗﮩﮧ سلیکون ہائیڈروجیل کی بنی ہوئی ہے جس میں ﭘﺎﻧﯽ ﺟﺬﺏ ﮐﺮﻧﮯ ﮐﯽ ﺻﻼﺣﯿﺖ ﮨﮯ، ﻋﺎﻡ ﻟﯿﻨﺰ ﮐﮯ ﻣﻘﺎﺑﻠﮯ ﻣﯿﮟ ﺍﻥ ﻣﯿﮟ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﺩﯾﺮ ﺗﮏ ﻧﻤﯽ ﺑﺎﻗﯽ ﺭﮨﺘﯽ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﯾﮧ ﺁﺳﺎﻧﯽ ﺳﮯ ﺧﺸﮏ ﻧﮩﯿﮟ ﮨﻮﺗﮯ

ﻣﺎﺭﮐﯿﭧ ﻣﯿﮟ ﻣﺨﺘﻠﻒ ﺍﻗﺴﺎﻡ ﮐﮯ ﮐﻨﭩﯿﮑﭧ ﻟﯿﻨﺰ ﺩﺳﺘﯿﺎﺏ ﮨﯿﮟ، ﺍﻥ ﻣﯿﮟ ﺭﻭﺯﺍﻧﮧ، ﮨﻔﺘﮧ ﻭﺍﺭ ﺍﻭﺭ ﻣﺎﮨﺎﻧﮧ ﺑﻨﯿﺎﺩﻭﮞ ﭘﺮ ﺗﺒﺪﯾﻞ ﮐﺌﮯ ﺟﺎﻧﮯ ﻭﺍﻟﮯ ﻟﯿﻨﺰ ﺷﺎﻣﻞ ﮨﯿﮟ، ﻣﺎﮨﺮﯾﻦ ﮐﮯ ﻧﺰﺩﯾﮏ ﺭﻭﺯﺍﻧﮧ ﺗﺒﺪﯾﻞ ﮐﺌﮯ ﺟﺎﻧﮯ ﻭﺍﻟﮯ ﻟﯿﻨﺰ ﻣﻨﺎﺳﺐ ﮨﯿﮟ، ﺍﻧﮩﯿﮟ ﺩﻥ ﺑﮭﺮ ﺍﺳﺘﻌﻤﺎﻝ ﮐﺮ ﮐﮯ ﺭﺍﺕ ﮐﮯ ﻭﻗﺖ ﭘﮭﯿﻨﮏ ﺩﯾﺎ ﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ، ﭼﻮﻧﮑﮧ ﺍﻧﮩﯿﮟ ﮐﺴﯽ ﮐﯿﺲ ﻣﯿﮟ ﺭﮐﮫ ﮐﺮ ﺍﮔﻠﮯ ﺩﻥ ﮐﮯ لئے ﻣﺤﻔﻮﻅ ﮐﺮﻧﮯ ﮐﯽ ﺿﺮﻭﺭﺕ ﻧﮩﯿﮟ ﮨﻮﺗﯽ، ﺍﺱ لئے ﺍﻥ ﻣﯿﮟ ﺑﯿﮑﭩﯿﺮﯾﺎ ﮐﺎ ﺧﻄﺮﮦ ﺑﮭﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﺭﮨﺘﺎ ﮨﮯ جو کہ ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﮐﻮ ﻧﻘﺼﺎﻥ ﭘﮩﻨﭽﺎﻧﮯ ﮐﺎ ﺳﺒﺐ ﺑﻦ ﺳﮑﺘﮯ ﮨﯿﮟ، ﺭﻭﺯﺍﻧﮧ کی ﺑﻨﯿﺎد ﭘﺮ ﻟﯿﻨﺰ ﺗﺒﺪﯾﻞ ﮐﺮﻧﮯ ﻭﺍﻟﻮﮞ ﮐﯽ ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺍﻧﻔﯿﮑﺸﻦ ﮐﺎ خطرہ کم سے کم رہتا ہے

ﮐﺌﯽ لوگ ﺧﻮﺑﺼﻮﺭﺕ ﻧﻈﺮ ﺁﻧﮯ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ ﺭﻧﮕﯿﻦ ﮐﻨﭩﯿﮑﭧ ﻟﯿﻨﺰ ﮐﺎ ﺍﺳﺘﻌﻤﺎﻝ ﮐﺮﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﺟﺲ ﮐﯽ ﻗﯿﻤﺖ امراضِ چشم، ﺑﺼﺎﺭﺕ ﮐﯽ ﮐﻤﯽ ﯾﺎ ﺑﯿﻨﺎﺋﯽ ﺳﮯ ﻣﮑﻤﻞ ﻣﺤﺮﻭﻣﯽ ﮐﯽ ﺻﻮﺭﺕ ﻣﯿﮟ ﺍﺩﺍ ﮐﺮﻧﺎ ﭘﮍ ﺳﮑﺘﯽ ﮨﮯ، ﻣﻌﯿﺎﺭﯼ ﮐﻨﭩﯿﮑﭧ ﻟﯿﻨﺰ ﺍﺳﺘﻌﻤﺎﻝ ﮐﺮﻧﮯ ﻭﺍﻟﮯ ﺑﮭﯽ ﺍﺣﺘﯿﺎﻁ ﻧﮧ ﮐﺮﻧﮯ ﮐﯽ ﻭﺟﮧ ﺳﮯ ﻣﺨﺘﻠﻒ ﺳﻨﮕﯿﻦ ﻣﺴﺎﺋﻞ ﺳﮯ ﺩﻭﭼﺎﺭ ﮨﻮ ﺳﮑﺘﮯ ﮨﯿﮟ، ﺁﻧﮑﮫ ﻣﯿﮟ ﺍﯾﺴﯽ ﭼﺒﮭﻦ ﻣﺤﺴﻮﺱ ﮨﻮ ﮐﮧ ﺟﯿﺴﮯ ﮐﻮﺋﯽ ﭼﯿﺰ ﺁﻧﮑﮫ ﮐﮯ ﺍﻧﺪﺭ ﭼﻠﯽ ﮔﺌﯽ ﮨﮯ ﯾﺎ ﮐﻨﭩﯿﮑﭧ ﻟﯿﻨﺰ ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﻟﮕﺎﻧﮯ ﺳﮯ ﻗﻮﺕ ﺑﺮﺩﺍﺷﺖ ﺧﺘﻢ ﮨﻮ ﺟﺎﺋﮯ ﺗﻮ ﺳﻤﺠﮫ ﻟﯿﮟ ﺁﭖ ﮐﯽ ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﻧﮯ ﮐﻨﭩﯿﮑﭧ ﻟﯿﻨﺰ ﮐﻮ ﻗﺒﻮﻝ ﮐﺮﻧﮯ ﺳﮯ ﺍﻧﮑﺎﺭ ﮐﺮ ﺩﯾﺎ ﮨﮯ، ایسے میں ﻓﻮﺭﺍً ﻟﯿﻨﺰ ﺍﺗﺎﺭ دیں اور اﮔﺮ ﻋﻼﻣﺎﺕ ﺟﺎﺭﯼ ﺭﮨﯿﮟ ﺗﻮ معالج سے مشورہ کریں